Danish Police Confirm Headless Torso Is Missing Journalist Kim Wall

1846

افسوسناک خبر: معروف ترین خاتون اینکر کی لاش سمندر کے کنارے سے برآمد، پورا ملک ہل کر رہ گیا

کوپن ہیگن ڈنمارک کی امدادی ٹیموں نے لاپتہ خاتون صحافی کی سربریدہ لاش ڈھونڈ لی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ڈی این اے رپورٹ سے یہ بات ثابت ہو گئی ہے کہ یہ لاش سویڈن کی خاتون صحافی کم وال کی ہی ہے۔ 30 سالہ خاتون صحافی کم وال نے مورخہ 10 اگست کو نجی آبدوز کے سفر پر نکلی تھیں۔

اطلاعات ہیں کہ آنجہانی صحافی اس آبدوز پر ایک رپورٹ تیار کرنا چاہتی تھیں لیکن اپنی پیشہ وارانہ ڈیوٹی کے دوران پراسرا طریقے سے ان کی ہلاکت ہو گئی۔ 21 اگست کو کم وال کی لاش ڈنمارک کے ایک چھوٹے سے جزیرے کے ساحل سے ملی تھی۔ خیال رہے کہ پولیس نے خاتون صحافی کے قتل کے الزام میں نجی آبدوز کے مالک پیٹر میڈسن کو گرفتار کر رکھا ہے۔ ابتدائی تفتیش میں ملزم نے پولیس کو بتایا کہ اس نے کم وال کو ساحل پر چھوڑ دیا تھا، لیکن کچھ دیر بعد آبدوز میں تکنیکی خرابی کے بعد وہ سمندر میں ڈوب گئی تھی جسے امدادی ٹیموں نے پانی سے نکالا۔ تاہم بعد ازاں ملزم نے اپنے بیان میں تسلیم کیا کہ کم وال ہلاک ہو چکی ہیں اور اس نے لاش کو سمندر برد کر دیا ہے۔ عدالت نے پیٹر میڈسن کو قتل کے الزام میں 24 دنوں تک پولیس تحویل میں دینے کا حکم جاری کیا ہے۔کم وال کی لاش کی تصدیق ہونے کے بعد پولیس نے تفتیش کا تمام رخ آبدوز کے مالک کی طرف موڑ دیا ہے۔ پولیس اب تفتیش کر رہی ہے کہ سویڈن کی خاتون صحافی کی ہلاکت کی وجوہات کیا تھیں؟ اور آبدوز کے سفر کے دوران ان کے ساتھ کیا واقعہ پیش آیا تھا۔

2 COMMENTS

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here